ہمارے متعلق

پاکستان میں اس وقت نوجوان آبادی کا تناسب تاریخ کی سب سے بلند ترین سطح پر ہے۔ پاکستان دنیا کے آواخرمیں وجود میں آنے والے چند ملکوں میں سے اور جنوبی ایشیا میں افغانستان کے بعد وجود میں آنے والا دوسرا ملک ہے۔ ہمارے ملک کی کل آبادی میں 68 فیصد لوگ تیس سال سے کم عمر اور 32 فیصد پندرہ سے بیس سال کی عمر کے درمیان ہیں۔ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کا مرکزی ایجنڈا نوجوانوں کو قومی اور بین الاقوامی سطح پر بااختیار بنانا ہے۔ اس سے قبل وزارت برائے امور نوجوانان کو وفاقی سطح پر ختم کر کے ملکمل طور پر صوبوں تک محدود کر دیا گیا تھا، جس کے باعث نوجوانوں کے مسائل اور ان کے حقوق کے لیے وفاقی سطح پر آواز اٹھانے والا کوئی مؤثر پلیٹ فارم نہیں تھا۔ وزیراعظم عمران خان نے اقتدار میں آنے کے بعد نوجوانوں کی قومی سطح پر شمولیت سے متعلق ترجیحی بنیادوں پر فیصلے کیے اور اس تناظر میں عثمان ڈار کو معاون خصوصی برائے امور نوجوانان مقرر کرنے کے ساتھ ساتھ اپنی نگرانی میں وزیراعظم سیکرٹریٹ میں یوتھ افیئرز ونگ تشکیل دیا۔ وزیراعظم کے اس مقصد اور وژن کی تکمیل کے لیے معاون خصوصی برائے امور نوجوانان نے مقامی، صوبائی، قومی اور بین الاقوامی سطح پر بڑے پیمانے پر مشاورتوں کا آغاز کیا تاکہ نوجوانوں کو درپیش مشکلات اور ان کے حل کے لئے بین الاقوامی معیار کے مطابق بہترین طریقوں کو سمجھا جا سکے۔ ان تمام عوامل کے نتیجے میں نیشمل یوتھ ڈویلپمنٹ فریم ورک (NYDF) کی تشکیل عمل میں آئی جوEs3 کے بنیادی اصولوں؛ تعلیم، روزگار اور مصروف عمل پر تیار کیا گیا ۔ ان 3Es کی اہمیت کو جانچتے ہوئے حکومت کی جانب سے “Prime minister’s Kamyab Jawan” کے نام سے ایک جامع پروگرام مرتب کیا گیا ہے۔

وژن:

پاکستان کو ایسی پرامن خوشحال قوم تصور کیا جاتا ہے جو اپنے نوجوانوں کو معیاری تعلیم، سودمند روزگار اور بامقصد طور پر مصروف عمل رکھتی ہے اور یہ کام مربوط، فعال، پائیدار یوتھ دوست قانون سازی، پروگرامز اور اداروں کے زریعے کیا جاتا ہے۔

مشن:

قومی پالیسیوں اور عملی کارروائیوں میں نوجوان آوازوں، تناظر، امنگوں، خواہشات اور سود مند مواقع کو یکجا کرنا۔

مقاصد:

  • صوبائی حکومتوں کو ان کی نوجوانوں پر مرتکز پالیسیوں اور پروگرامز میں سہولیات اور مدد دینا اور نوجوانوں کی ترقی کے لیے بین الحکومتی رابطہ کاری کو مضبوط بنانا۔
  • تحقیق و ترقی، انسانی وسائل اور مداخل کی ترقی کے لیے نجی و سرکاری شراکت داری کو فروغ دینا۔
  • بین الاقوامی ترقیاتی اداروں کے ساتھ اشتراک کار اور شراکت داری کے لیے یوتھ دوست پروگرامز کے دائرہ کار کا تعین کرنا۔
  • نوجوانوں کی صحت و تندرستی، سیروتفریح، آگاہی، شہری مصروفیت، روزگار اور سماجی بااختیاری پر مرتکز پروگراموں کو فروغ دینا۔
  • رسمی اور غیر رسمی تعلیم کو ٹیکنیکل اور پیشہ ورانہ ہنرمندی، ڈیجیٹل مہارتوں، مالیاتی سمولیت کو فروغ دینا۔ اسی طرح سماجی کاروبار اور نوجوانوں کی اقتصادی و معاشی باٰاختیاری میں مدد کے لیے مائیکرو بزنس کو فروغ دینا۔
  • پائیدار ترقی کے اہداف کے حصول کے لیے نوجوانوں کو مصروف عمل کر کے پاکستان کے عالمی وعدوں کو پورا کرنا خصوصاً پسماندہ یوتھ گروپوں کو قوتی دھارے میں لانے پر توجہ دیتے ہوئے نوجوانوں سے متعلقہ عالمی وعدوں کی تکمیل۔

اہم بنیادی اقدار:

باٰاختیاری:

باٰاختیاری فیصلہ سازی اور تمام شعبہ ہائے زندگی میں ان کی نمائندگی کو تسلیم کرتے ہوئے فیصلہ سازی کے عمل میں بااختیار بنانے کے لیے نوجوانوں کے لیے مواقع پیدا کرنا

برابری (مساوات):

تبدیلی کے آلہ کار کے طور پر تمام نوجوان برابر کی قدروقیمت رکھتے ہیں اور اس فریم میں مختص کیے گئے وسائل میں نسل، عقیدہ پس منظر اور صنف کا لحاظ کیے بغیر وسائل مختص کیے گئے ہیں

Diversity:

تنوع (جدت)

مختلف پس منظر اور ثقافتی شناختیں مساوی قدروقیمت کی حامل ہیں اور ان کا تمام سطحوں پر احترام کیا جاتا ہے۔

کاروبار اور تخلیق:

نوجوانوں کو سماجی و اقتصادی ترقی کے لیے کاروباری طریقوں، جدت اور تخلیق سے کام لینے کی ترغیب دینا۔

برداشت

مزہبی، فرقہ ورانہ، نسلی اور سیاسی تقسیم کا خاتمہ کرنے کے لیے تمام سطحوں پر برداشت کی حوصلہ افزائی کرنا

ادارہ جاتی مظبوطی

نوجوان دوست جذبوں کے ساتھ فریم ورک پر عملدرآمد کے لیے قومی اور صوبائی اداروں کو مدد اور سہولیات فراہم کرنا

شفافیت اور احتساب

یوتھ دوست گورننس کے لیے اداروں کو کارکردگی کے حوالہ سے جوابدہ بنانا اور وسائل منصفانہ و آزادانہ تقسیم کرنا

Paksitan Citizen Portal

تجاویز و شکایات

کامیاب جوان پروگرام سے متعلق اپنی تجاویز و شکایات دینے کے لیے • گوگل پلے سے ایپلیکیشن ڈاؤن لوڈ کریں سے سٹیزن پورٹل ایپ ڈاؤن لوڈ کریں اور یوتھ سے منسلک لنک پر جائیں۔