نیشنل یوتھ کونسل

قومی یوتھ کونسل مندرجہ ذیل عوامل کو مد نظر رکھتے ہوے بنائی گئی ہے۔

قومی یوتھ کونسل نمائندے

John Doe

۔ عدنان شفیع (اسلام آباد)

عدنان شفیع پاکستان کے معروف شاپنگ انٹیلی جنس پلیٹ فارم priceOye.pk کے بانی اور سی ای او ہیں۔ وہ ایک جانی مانی کاروباری شخصیت ہیں جو 8 سال سے متعدد کمپنیوں کے انتظامی امور سے وابستہ رہے ہیں۔ عدناان کو Forbes میگزین میں بطور30 سال اور اس سے کم عمر نوجوان لیڈر نمایاں جگہ دی گئی۔ انھوں نے کئی ایوارڈ جیت رکھے ہیں جن میں Asia Pacific ICT Awards Guangzhou اور P@SHA ICT Awards شامل ہیں۔

Watch Video
John Doe

آمنہ کوثر (پنجاب)

پراجیکٹ مینیجر، نوجوان سیاستدانوں کے فیلو شپ پروگرام (YPFP) کی پلڈاٹ کوآرڈینیٹر
آمنہ کوثر جون 2014 سے پلڈاٹ سے وابستہ ہیں۔ انھوں نے Kinnaird College, Lahore سے بیچلرز ڈگری حاصل کی ہے اور تحقیق و ترقی، انتظامی امور اور مواصلات کے شعبوں میں پیشہ ورانہ خدمات سر انجام دے رہی ہیں۔ آمنہ پاکستان میں سیاسی جماعتوں کو مستحکم کرنے کے لیے کام کرنے والے پروگرام Consolidating Democracy in Pakistan (CDIP) میں بطور خصوصی ماہر کام کر رہی ہیں۔ آمنہ نے مارچ – اپریل 2019 میں منعقد کیے جانے والے پاکستان کے پہلے نوجوان سیاستدانوں کے فیلو شپ پروگرام (YPFP) کے بطور کوآرڈینیٹر فرائض بخوبی انجام دیے اور اب تک جاری رکھے ہوئے ہیں۔ فی الوقت وو YPFP کے تحت مزید آنے والے پروگرامز کی منصوبہ بندی میں سر گرم عمل ہیں۔ اس سے قبل آمنہ ملک بھر میں پُر امن جمہوری حکومتوں اور پائیدار ترقی سے متعلق کئی پروگرام منعقد کروا چکی ہیں۔ آمنہ جمہوریت اور گورننس پروگرام کے تحت سیاسی جماعتوں اور قیادت کی ترقی و تربیت پر کام کے دوران مختلف تحقیقی مقالے بھی پیش کر چکی ہیں ۔ اس کے علاوہ وہ عوامی پالیسی کے موضوع پر پاکستان کی 3 بڑی جماعتوں کے لیے قیادت کے حوالے سے ایک روزہ کورس منعقد کروانے کی زمہ داری بھی نبھا چکی ہیں۔ آمنہ ایک بہترین قلم کار بھی ہیں اور متعدد پلڈاٹ کی تحریروں کے علاوہ مختلف قومی آن لائن اور پرنٹ میڈیا کے لیے بھی لکھتی رہی ہیں۔

Watch Video
DILEEP KUMAR

دلیپ کمار (سندھ)

دلیپ کمار زندگی کی بنیادی ضروریات سے محروم سندھ کے دور دراز گاؤں میں پیدا ہوئے اور متمول تعلیمی پس منظر والے نچلے متوسط طبقے کے گھرانے سے تعلق رکھتے ہیں۔ سندھ کے ضلع تھرپارکر کے ایک چھوٹے سے شہر مِٹھی میں پرورش پانے والے دلیپ کمار نے الیکٹریکل انجینیرنگ میں بی-اے، پولیٹیکل سائنس میں ماسٹرز کی ڈگری حاصل کی، بعد ازاں ایل ایل بی کیا اور پیشے کے اعتبار سے وکیل ہیں۔ انسانی حقوق، سائبر کرائم اور فوجداری قانون وہ شعبے ہیں جن میں دلیپ سب سے زیادہ کام کرتے ہیں۔ وہ گزشتہ دس سال سے سماجی و سیاسی اور انسانی حقوق کے حوالے سے کام کرنے والے فعال کارکن ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ ایک بہترین کالم نگار بھی ہیں اور متعدد سندھی اور اردو روزناموں کے لیے کالم لکھتے ہیں۔ وہ نوجوان پیشہ ور افراد کے لیے مختلف تربیتی ورکشاپس، کانفرنسوں، کنونشنز اور فورمز میں سہولت کار اور اسپیکر کے فرائض بھی انجام دیتے ہیں۔ ان کی تحریریں سہ ماہی بنیادوں پر سماجی، سیاسی و ادبی رسالہ ''محفوظ سندھ'' میں بھی شائع ہوتی رہی ہیں۔ انھوں نے تعلیمی نظام کی بہتری، خواتین کو بااختیار بنانے، امن رواداری اور معاشرتی انصاف کے فروغ، عوام میں قانونی اور سیاسی شعور اجاگر کرنے کے لیے بطور پروگرام و پروجیکٹ مینیجر مختلف تنظیموں کے ساتھ بھی کام کیا ہے۔

Watch Video
DR. FAISAL KHAN

ڈاکٹر فیصل خان (خیبر پختون خواہ)

ڈاکٹر فیصل خان اکنامک فورم میں نوجوان عالمی لیڈر 2019، ماہر حیاتیات اور ایوارڈ یافتہ کاروباری شخصیت ہیں ۔ انھوں نے آکسفورڈ یونیورسٹی سے بائیو ٹیکنالوجی میں ماسٹرز اور پی ایچ ڈی کی ڈگری حاصل کر رکھی ہے اور genes کے مختلف افعال سے متعلق معلومات کے لیے مشین لرننگ الگورتھم بھی تیار کیا ہے۔ انھوں نے پشاور میں پشاور 2.0 اور ماحولیاتی نظام کا ٹیکنالوجی سٹارٹ اپ تیار کرنے کے لیے بیس کیمپ قائم کیا جس کے زریعے خیبر پختونخواہ میں لاکھوں نوجوانوں کے لیے آگے بڑھنے کے مواقع پیدا ہوئے۔ ڈاکٹر فیصل خان بانی و اسسٹنٹ پروفیسر انسٹیٹیوٹ آف انٹیگریٹو بائیو سائنس اور سی ای سی او ایس پشاور یونیورسٹی بھی ہیں۔ وہ کینسر جینومکس سے متعلق Precision Medicine Lab کے بانی اور CECOS – RMI، بائیو اکانومی کے بانی اور جوائنٹ سنٹرز کے CECOS-IM بھی ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ کے پی آئی ٹی بورڈ، کے پی یوتھ ڈویلمپنٹ کمیشن، ایلیمنٹری ایجوکیشن فاؤنڈیشن، ہائر ایجوکیشن ریسرچ انڈوومنٹ فند سمیت 12 سے زائد وفاقی و صوبائی اداروں اور ٹاسک فورسز کے بورڈ ممبر بھی ہیں۔ انھوں نے پلاننگ کمیشن کے زریعے ینگ ڈویلپمنٹ لیڈر ایوارڈ، آکسفورڈ یونیورسٹی نون سکالرشپ اور St. Anne کے ڈومس ایوارڈ سمیت متعدد قومی اور بین الاقوامی ایوارڈ جیتے ہیں۔

Watch Video
FARRUKH AWAIS

فرخ اویس (آزاد جموں و کشمیر)

محترمہ فرخ اویس چوہدری آزاد کشمیر سے تعلق رکھنے والی نوجوان سماجی کارکن اور ایم فل سکالر ہیں اور پاکستان گرلز گائیڈ ایسوسی ایشن کی سربراہ کی حیثیت سے مؤثر انداز میں کام کر رہی ہیں۔ فرخ اویس اپنی تقریری صلاحیتوں کے زریعے تبدیلی کے لیے انتہائی مثبت کام کر رہی ہیں، اور امن سے متعلق اٹھائے گئے مختلف اقدامات کا حصہ رہی ہیں۔ اپنے کیرئیر کے حساب سے مختلف امتیازات رکھتے ہوئے ان کا مقصد اپنی تمام تر توانائیاں پاکستان کے نوجوانوں کی بہتری کے لیے صرف کرنا ہے۔

Watch Video
HAMZA ALI ABBASI

حمزہ علی عباسی (اسلام آباد)

حمزہ علی عباسی تھیٹر، فلم اور ٹیلی وژن کے معروف اداکار اور ہدایت کار ہیں۔ انھوں نے امریکہ سے انٹرنیشنل ریلیشنز میں بیچلرز اور قائداعظم یونیورسٹی پاکستان سے ماسٹرز کی ڈگری حاصل کی ہے۔ انھوں نے سی ایس ایس کا امتحان بھی پاس کیا ہوا ہے اور فلم سازی اور اداکاری کرنے سے پہلے سول آفیسر کی حیثیت سے کام کر رہے تھے۔ اے آر وائے فلم ایوارڈز میں ان کو بہترین معاون اداکار کا ایوارڈ بھی دیا گیا۔

Watch Video
HASAN ALI

حسن علی (پنجاب)

پاکستان کرکٹ بورڈ کے سال 2018 کے ابھرتے ہوئے کھلاڑی حسن علی گوجرانوالہ کے نوجوان فاسٹ باؤلر ہیں، جنہوں نے 2016 میں پاکستان کی جانب سے پہلا بین الاقوامی میچ کھیلا ۔ 2017 میں حسن علی پشاور زلمی کا حصہ بنے جس نے پاکستان سپر لیگ جیتی۔ انھوں نے 2017 میں آئی سی سی چیمپیئنز ٹرافی کے 5 میچوں میں 13 وکٹیں حاصل کرنے پر 'مین آف دی ٹورنامنٹ' کا ایوارڈ جیتا۔ حسن علی پاکستان کے لیے ایک روزہ میچوں میں تیز ترین 50 وکٹیں حاصل کرنے والے پہلے کھلاڑی ہیں اور ان کو پی سی بی کی جانب سے 'ایمرجنگ پلیئر آف دی ایئر' اور 2017 میں آئی سی سی کی جانب سے 'آیمرجنگ کرکٹر آف دی ایئر' کے اعزاز سے نوازا گیا۔ وہ 2017 کے آخر تک ایک روزہ میچوں کے بہترین باؤلر تھے اور انھیں پی سی بی کی جانب سے 2018 میں 'ون ڈے پلیئر آف دی ایئر' نامزد کیا گیا۔

Watch Video
KARISHMA ALI

کرشمہ علی (خیبر پختونخواہ)

خاتون قومی فٹ بالر، جو 2016 میں جوبلی گیمز اور 2017 میں اے ایف ایل انٹرنیشنل کپ میں شرکت کرنے والی ٹیم کا حصہ تھیں۔ انھوں نے خواتین کی قومی فٹبال چیمپیئن شپ اور AKYSB 2018 طلائی تمغے اور بین الاقوامی جوبلی گیمز 2016، اسٹیٹ بینک ویمنز فٹبال ٹورنامنٹ 2016 اور AKYSBP 2015 میں چاندی کے تمغے حاصل کیے۔ اس کے علاوہ پاکستان میں خواتین کی قومی اے ایف ایل 2017 کی ٹیم کے زریعے رائزنگ سٹار کا اعزاز بھی حاصل کیا ۔ 2016 میں فاسٹ یونیورسٹی میں منعقدہ فٹبال ٹورنامنٹ، 2016 کے روٹس اولمپیڈ، NUST کے زیر ٹورنامنٹ میں فاتح قرار پائیں۔ کرشمہ علی چترال ویمنز سپورٹس کلب کی بانی اور ہیڈ کوچ ہیں. کے ساتھ ساتھ دستکاری مرکز کی بانی بھی ہیں۔ ینگ رائزنگ سٹار کی مڈ فیلڈ کوچ ہونے کے ساتھ ساتھ کرشمہ علی آغا خان سوشل ویلفیئر بورڈ کے ساتھ رضاکارانہ طور پر بھی کام کر رہی ہیں۔ وہ 2010 سے الزہرہ پول سٹار سکول چترال میں انگریزی کی ٹیوٹر بھی ہیں۔

Watch Video
KHALIDA BROHI

خالدہ بروہی (بلوچستان)

بلوچستان سے تعلق رکھنے والی خالدہ بروہی سرگرم کارکن اور کاروباری خاتون ہیں۔ وہ سہغر فاؤنڈیشن کی بانی اور ایگزیکٹیو ڈائریکٹر ہیں، جو کہ پاکستان میں خواتین کو تعلیم حآصل کرنے کے مواقع فراہم کرنے کے لیے بنائی گئی غیر منافع بخش تنظیم ہے۔ خالدہ اپنے شوہر کے ساتھ The Chai Spot کی شریک بانی بھی ہیں، یہ ایک ایسا ادارہ ہے جو پاکستان کی مختلف خوبصورت ثقافتوں کو ہاتھ سے تیار شدہ سامان، کہانیوں اور مختلف واقعات کے زریعے امریکہ میں متعارف کرواتا ہے۔ خالدہ اپنی آپ بیتی کی مصنف بھی ہیں جس میں انھوں نے اپنے بچپن کی کہانیوں کو اجاگر کرتے ہوئے بتایا ہے کہ وہ کس طرح پاکستان میں خواتین کے حقوق کے لیے کام کرنے پر مائل ہوئیں۔ خآلدہ کو دو بار سوشل انٹرپرینیورشپ کے لیے Forbes’30 under 30 پروگرام میں نامزد کیا گیا، Emerging Global Leader کے اعزاز سے نوازا گیا، Buffet Institute کی طرف سے ایوارڈ اور Boston کی ایم آئی ٹی میڈیا لیب میں ڈائریکٹر فیلو شپ کے ایوارڈ سے نوازا گیا، Dr. Martin Lutherکے جونیئر سنٹر کی جانب سےAngel ایوارڈ سے بھی نوازا گیا۔ خالدہ بروہی کا نام 25 بااثر اور ملک کی 100 اہم خواتین میں شامل ہے ۔ اس کے علاوہ ویمن ان دی ورلڈ فاؤنڈیشن کے زیر سایہ ویمن آف امپیکٹ ایوارڈ اور حکومت سندھ کی جانب سے ویمن آف ایکسی لینسی ایوارڈ سے بھی نوازا گیا۔ خالدہ ٹی ای ڈی گلوبل، ڈیووس، ورلڈ افیئر کونسل، ٹوگیدر لائیو، گوگل، فیس بک، ٹرپ ا یڈوائزر، پلوسو بلڈنگ پیس ایوارڈ سمٹ جیسے پلیٹ فارمز پر بھی بات کر چکی ہیں۔

Watch Video
KHURRAM LALANI

خرم لالانی (سندھ)

خرم لالانی نے 2013 میں ڈیلاوئیر یونیورسٹی سے انرجی پالیسی میں ماسٹر کی ڈگری کے ساتھ فلبرائٹ سکالر کی حیثیت سے گریجویشن کیا ۔ خرم بین الاقوامی مالیات، پائیدار ترقی اور توانائی پالیسی کے معاملات میں دس سال سے زیادہ کا تجربہ رکھتے ہیں ، اور توانائی اور انفراسٹرکچر کے شعبوں میں بطور مشیر کام کر رہے ہیں۔ انھوں نے صوبائی حکومت کے مختلف امور کے ساتھ وفاقی وزارت خزانہ، وزارت توانائی اور موسمیاتی تبدیلی کی وزارت میں بطور سینئر اقتصادی اور پالیسی مشیر خدمات سر انجام دی ہیں۔ انھوں نے حکومت کے لیے مشاورتی امور کے ساتھ ساتھ پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ (پی پی پی)، انفراسٹرکچر فنانس، انرجی پالیسی، سبسڈی ایجنڈا، انرجی ریفارمز و ٹیرف اور ریگولیٹری سکوپنگ کے لیے پالیسی فریم ورک پر بڑے پیمانے پر کام کیا ہے۔ اپنے موجودہ کار منصبی سے قبل خرم کارپوریٹ فنانس اور ایڈوائزری سروسز میں سٹی گروپ کے ساتھ کام کر چکے ہیں۔ خرم نے ڈان ای بی آر کے لیے کالم بھی لکھے ہیں اور اس کے علاوہ ایکسپریس ٹریبیون کے لیے بطور مصنف بھی کام کر چکے ہیں۔ اپنے مشاورتی کام کے علاوہ، خرم نے Consuldents (www.consuldents.com) کی بنیاد رکھی جو کہ فارغ التحصیل طلباء کے لیے بہترین پلیٹ فارم ہے جہاں پاکستانی طلباء مختصر مدتی صنعتی منصوبوں کے لیے کام کر سکتے ہیں ، سکالر شپ اور فیلو شپ حاصل کر سکتے ہیں ، اور اپنی ڈگری کے فائنل پراجیکٹس پیشہ ور صنعتی افراد کے سامنے رہنمائی اور بہتری کے لیے پیش کر سکتے ہیں. علاوہ ازیں فارغ التحصیل طلباء نوکریوں اور انٹرنشپس کے لیے بھی درخواستیں دے سکتے ہیں ۔ Consuldents نے متعدد ایوارڈز حاصل کر کے اور خبروں میں نمایاں جگہ بناتے ہوئے پورے ملک میں تیزی سے ترقی کی ہے اور ملک کا سب سے بڑا تعلیمی و صنعتی شعبہکا نیٹ ورک بنانے میں کامیاب رہا ہے۔ پاکستان میں نوجوانوں کی رہنمائی، توانائی اور پائیدار ترقی میں اپنے کام کے لیے خرم کو پاکستان میں وزیراعظم کی قومی یوتھ کونسل کا پہلا رکن منتخب کیا گیا ہے۔

Watch Video
MAHIRA KHAN

ماہرہ خان (سندھ)

ماہرہ خان پاکستان انڈسٹری کی معروف اداکارہ ہیں۔ ماہرہ بطور بہترین اداکارہ لکس سٹائل ایوارڈز سمیت متعدد ایوارڈز حاصل کر چکی ہیں۔ انھوں نے اعلیٰ تعلیم امریکہ کے سانتا مونیکا کالج، لاس اینجلس سے حاصل کی۔

  • 2015: - بن روئے کے لیے بہترین اداکارہ کے لیے مسالہ ایوارڈ حاصل کیا.
  • 2016: - پاکستان کی جانب سے ابھرتے ہوئے ٹیلنٹ کے بطورطور پر پہلا فیمینا مڈل ایسٹ ویمن ایوارڈ حاصل کیا.
  • 2017: ووگ بیوٹی آیوارڈ
  • 2017: آٹھویں بیروت انٹرنیشنل ایوارڈ فیسٹیول میں بین الاقوامی پہچان اور بہترین لباس کے لیے خصوصی ایوارڈ
  • 2017: مسالہ ایوارڈز (Asian Women of Substance)
  • 2018: فلم اور ایکٹیوزم ایوارڈ (یو کے ایشین فلم فیسٹیول)
Watch Video
MAJOR TANVEER SHAFI

میجر تنویر شفیع (خیبر پختونخواہ)

ضرب عضب کے غازی اور تمغہ جرات، شوال آپریشن کے دوران ٹانگ سے محروم ہو جانے والے میجر تنویر شفیع کا تعلق سوات، کے پی کے سے ہے۔ میجر تنویر شفیع کو اپریل 2011 میں 22 پنجاب میں کمیشن ملا اور انھوں نے آپریشن المیزان اور آپریشن ضرب عضب میں حصہ لیا، 2015 میں وادی شوال، شمالی وزیرستان میں زخمی ہوئے۔ ان کو ضرب عضب میں بہترین کارکردگی پر تمغہ بسالت سے نوازا گیا۔

Watch Video
MARVIA MALIK (PUNJAB)

مارویہ ملک (پنجاب)

مارویہ ملک پاکستان کی پہلی خواجہ سرا ٹی وی اینکر ہیں۔ انھوں نے زرائع ابلاغ میں اپنا کیریئر شروع کرنے سے پہلے پنجاب یونیورسٹی سے ڈگری حاصل کرنے کے اخراجات کو پورا کرنے کے لیے میک اپ آرٹسٹ کی حیثیت سے کام کیا۔ اس کے بعد انھوں نے کوہ نور نیوز میں نوکری کے لیے درخواست دی۔ نیوز اینکر بننے پر مارویہ کا کہنا ہے کہ ہمارا معاشرہ خواجہ سرا لوگوں کے ساتھ شرمناک سلوک کرتا ہے، ان کو بدنام کرتا ہے، نوکریاں دینے سے گریز کرتا ہے، ان پر ہنستا ہے اور طرح طرح کے طعنے دیتا ہے، میں اس روایت کو تبدیل کرنا چاہتی ہوں۔ اس سے قبل ماڈلنگ بھی کر چکی ہیں۔ مارویہ لاہور میں منعقدہ پاکستان فیشن ڈیزائن کونسل کے زیر اہتمام فیشن ویک کے لیے بھی کام کر چکی ہیں جس کا موقع ان کو لاہور گرائمر سکول کے طلباء کے زریعے ملا۔ مارچ 2018 میں مارویہ پاکستانی نیوز نشریات میں بطور نیوز ریڈر کام کرنے والی پہلی خواجہ سرا بنیں جس نے میڈیا نیوز کی توجہ اپنی جانب مبذول کرائی۔ وہ کوہ نور نیوز کے ساتھ ان کے پروگرام 'آزاد بھی، زمہ دار بھی' میں کام کر رہی ہیں جہاں ان کو صحافت کے میدان میں اپنی شخصیت نکھارنے کا بہترین موقع ملا۔ وہ پاکستان میں خواجہ سراؤں کے لیے جائیداد میں حصہ اوردیگر حقؤ ق کے حصول کے لیے کام کرنے کا ارادہ رکھتی ہیں۔ وہ خواجہ سرا افراد کے لیے نوکریوں اور پارلیمنٹ میں نمائندگی کا بھی مطالبہ کر رہی ہیں۔ مارویہ 'تیسری صنف' کی اصطلاح پر یقین نہیں رکھتیں۔

Watch Video
MAULANA MUHAMMAD AHMED HANIF

مولانا محمد احمد حنیف (پنجاب)

مولانا محمد احمد جالندھری کا تعلق پاکستان کے ایک عظیم علمی اور مذہبی گھرانے سے ہے۔ ان کے والد مولانا محمد حنیف جالندھری ممتاز مذہبی سکالر ہیں اور دادا حضرت مولانا خیر محمد جالندھری بھی اپنے وقت کے مشہور سکالر تھے۔ مولانا محمد احمد جالندھری زندگی کے ہر شعبے میں پیشہ ورانہ انداز اپنانے کے ساتھ ساتھ نہایت پراعتماد، مضبوط اور لچکدار شخصیت کے مالک ہیں۔ آپ اردو، عربی، انگریزی اور پنجابی زبانوں میں مہارت رکھنے والے پرجوش استاد اور خطیب ہیں۔ انھوں نے روایتی دینی نظام سے تعلیم حاصل کرتے ہوے وفاق المدارس العربیہ پاکستان سےشہادت عالمیہ کیا جو اسلامی اور عربی علوم میں ماسٹرز کے مساوی ہے۔ اس کے بعد انھوں نے بہاؤالدین زکریا یونیورسٹی ملتان سے اسلامک سٹڈیز میں ایم فل اعلیٰ گریڈز سے پاس کیا۔ فی الحال وہ جامعہ خیر المدارس ملتان میں درس نظامی کے مختلف مضامین کی تدریس کا کام سر انجام دے رہے ہیں. علاوہ ازیں وو تحقیقی و انتظامی زمہ داریاں بھی نبھا رہے ہیں۔

Watch Video
MUNIBA MAZARI (PUNJAB)

۔ منیبہ مزاری (پنجاب)

منیبہ مزاری اقوام متحدہ میں پاکستان کی پہلی خاتون خیر سگالی سفیر ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ آرٹسٹ، سماجی کارکن اور ٹی وی اینکر بھی ہیں۔

  • - اقوام متحدہ میں پاکستان کی پہلی خاتون خیر سگالی سفیر
  • - 15 دسمبر، 2017 کو 'کینیڈا گلوبل کنسلٹنگ اینڈ ٹریننگ سنٹر لمیٹڈ (سی سی جی)' کے زریعہ 'گو ایکسلینس ٹرینر سرٹیفیکیٹ' سے نوازا گیا۔
  • - انسانی حقوق کے لیے کام کرنے پر سربیا میں 'The Karic Brothers Award 2017' حاصل کیا۔
  • - میڈیا اور مارکیٹنگ میں 2016 کے Forbes’30 under 30 کے لیے نمایاں جگہ ملی۔
  • - 2015 میں بی بی سی کی 100 انتہائی متاثر کن خواتین میں نامزد کیا گیا۔
  • - ڈبلیو سی سی آئی لاہور ڈویژن کی جانب سے ' Honour Award 2015حاصل کیا۔
  • - این پی سی کی جانب سے بطور نوجوان سپیکر 'شاہین ایوارڈ 2015' حآصل کیا۔
Watch Video
SADIA BASHIR

سعدیہ بشیر (اسلام آباد)

سعدیہ بشیر پکسل آرٹ گیمز اکیڈمی (پی جی اے) کی بانی ہیں جو پاکستان کی پہلی گیمز اکیڈمی ہے۔ انھوں نے کمپیوٹر سائنس میں بیچلرز اور ایم اے کی ڈگریاں حاصل کی ہیں اور گزشتہ 8 سال سے گیم انڈسٹری میں کام کر رہی ہیں۔ انھوں نے تقریباً 4 سال پہلے پکسل آرٹ گیمز اکیڈمی کی بنیاد رکھی۔ پی جی اے ایسی تربیتی اکیڈمی ہے جو باہمی تعاون کے زریعے گیمز کی تیاری، ڈیزائن اور آرٹ کے حوالے سے کام کرتی ہے۔ انھوں نے تخلیقی نظریات کو عملی طور پر بنانے اور ان پر عملدرآمد کرنے میں ڈویلپرز کی مدد کے لیے پی جی اے میں گیم لیب بھی قائم کی ہے۔ سعدیہ کا نام انٹر پرائز ٹیکنالوجی 2018 کی جانب سے Forbes 30’ under 30کی فہرست میں شامل کیا گیا اور فیس بک گیمنگ کے زریعے دی گیم ایوارڈذ 2018 میں گلوبال گیمنگ سٹیزن کے طور پر تسلیم کیا گیا۔ فی الحال وہ AR پر مبنی ایڈونچر گیم پر کام کر رہی ہیں۔

Watch Video
SAMINA BAIG

ثمینہ بیگ (گلگت بلتستان)

ثمینہ بیگ کا تعلق گلگت بلتستان کے علاقے ہنزہ گوجل کے گاؤں شمشال سے ہے، ان کو ان کے بھائی نے 15 سال کی عمر میں کوہ پیمائی کی تربیت دی۔ ان کی مہمات صنفی برابری کا مظہر ہیں ،جن کی پیروی وہ کوہ پیمائی کے شوق میں کرتی ہیں۔ ثمینہ بیگ 19 مئی، 2013 کو دنیا کی بلند ترین چوٹی ماؤنٹ ایورسٹ (سطح سمندر سے 8848 میٹر) پر پہنچنے والی پہلی پاکستانی خاتون بنیں۔ ثمینہ نے اپنے کوہ پیمائی کے کیرئیر کا آغاز 2010 میں شمشال کی 6000 میٹر بلند چوٹی سر کرنے سے کیا تھا اور وہ 2011 میں کوہ بروبر بھی سر کر چکی ہیں۔ 2010 میں موسم سرما میں 6050 میٹر کی چوٹی Minglighsar سر کرنے والی پہلی خاتون ہونے کا اعزاز حاصل کیا۔ جبکہ 7000 میٹر اونچی چوٹی سر کرنے کی کوشش پہاڑ پر موسم کی خرابی کی وجہ سے ناکام ہوئی۔ ثمینہ بیگ 2015 میں دنیا کی دوسری بلند ترین چوٹی سر کرنے کی کوشش کرنے والی پہلی پاکستان خاتون تھیں لیکن چڑھائی کے دوران زخمی ہونے کی وجہ سے ان کو واپس آنے کا کہا گیا۔ ثمینہ وہ پہلی خاتون ہیں جنھوں نے 7 براعظموں میں 7 بلند ترین چوٹیوں پر چڑھائی کی ہے۔( جن میں ماؤنٹ ایورسٹ ایشیاء، ماؤنٹ ایکونکاگوا جنوبی امریکہ، ماؤنٹ ونسن انٹارکٹیکا، ماؤنٹ کلیمنجارو افریقہ، ماؤنٹ ڈینالی شمالی امریکہ، ماؤنٹ پنجیکجیا اوسیانا، ماؤنٹ ایلبراس روس/یورپ شامل ہیں)۔ ثمینہ بیگ اپنے خاندان کی قائم کردہ مقامی تنظیم پاکستان یوتھ آؤٹ ریچ فاؤنڈیشن (PYOF)کا بھی حصہ ہیں۔ PYOF نوجوانوں میں تعلیم اور کوہ پیمائی کے بارے میں شعور اجاگر کرنے کے لیے کام کرتی ہے، اس کے ساتھ ساتھ اس کا مقصد پاکستان میں خواتین کے حوالے سے کوہ پیمائی اور اسکیئنگ جیسی دیگر سرگرمیوں کو فروغ دینا ہے۔

Watch Video
SANA MIR

ثناء میر (پنجاب)

ثناء میر کرکٹر ہیں اور ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی میں پاکستان قومی ویمن کرکٹ ٹیم کی کپتان رہی ہیں۔ اکتوبر 2018 میں وہ آئی سی سی کے ایک روزہ میچوں کی رینکنگ میں پہلے نمبر پر آنے والی پہلی پاکستانی خاتون کرکٹر بن گئیں۔ ثناء ایشین گیمز میں پاکستان کے لیے 2010 اور 2014 میں دو طلائی تمغے حاصل کر چکی ہیں۔ انھیں 2008 کے خواتین کرکٹ کے عالمی کپ کوالیفائیر میں 'پلئیر آف دی ٹورنامنٹ' بنایا گیا، اس وقت وہ آئی سی سی کے ایک روزہ میچوں میں خواتین باؤلرز کی درجہ بندی میں پہلے نمبر پر ہیں۔ وہ گزشتہ 9 سالوں سے آئی سی سی کی ٹاپ 20 رینکنگ میں شامل ہیں۔ ان کی کپتانی کے دوران پاکستان ویمن کرکٹ ٹیم کی 8 کھلاڑیوں نے آئی سی سی کی ٹاپ 20 رینکنگ میں جگہ بنائی۔ فروری 2017 میں ویمن کرکٹ ورلڈ کپ کے کوالیفائیر کے دوران ایک روزہ میچوں میں 100 وکٹیں لینے والی پہلی پاکستانی خاتون بنیں۔ فروری 2019 میں انھوں نے خواتین کے 100 ٹوئنٹی ٹوئنٹی میچوں میں کھیلنے والی پہلی پاکستانی خاتون ہونے کا اعزاز حاصل کیا۔

Watch Video
SHAKIRULLAH

۔ شاکراُللہ

شاکر صدارتی گولڈ میڈلسٹ ہونے کے ساتھ ساتھ نیشنل یوتھ کونسل پاکستان بوائے سکاؤٹس ایسوسی ایشن اسلام آباد کے چیئرمین ہیں۔

Watch Video
SHAZIA BATOOL (BALOCHISTAN)

شازیہ بتول (بلوچستان)

شازیہ بتول کا تعلق کوئٹہ سے ہے اور انھوں نے لاہور یونیورسٹی سے فائن آرٹس میں ماسٹرز مکمل کیا۔ ان کو حکومت پاکستان کی جانب سے میڈل آف ایکسیلنس (ستارہِ امتیاز)، قومی یوتھ ایوارڈ 2008، پروویژنل یوتھ ایوارڈ 2008، ایکسپی ڈیشن ایوارڈ 2010، یونائیٹڈ نیشنل ویمن ایوارڈ سمیت بہت سے اعزازات سے نوازا گیا ہے۔ شازیہ پچھلے پچیس برس سے ریڑھ کی ہڈی کے سرمئی مادے کی وائرل سوزش کی وجہ سے poliomyelitis نامی فالج کا شکار ہیں: اس کے ساتھ مختلف پٹھوں کے گروہوں کا فالج ہوتا ہے جو بعض اوقات کمزور ہوتا ہے اور اکثر اس کے نتیجے میں مستقل بگاڑ پیدا ہوتا ہے۔ شازیہ بریکنگ بیرئیر ویمن (بی بی ڈبلیو) کی بانی بھی ہیں جو انھوں نے معذور خواتین کو ایک پلیٹ فارم مہیا کرنے کے لیے بنائی، ایک ایسا پلیٹ فارم جس کے زریعے وہ معاشرے کی پیچیدہ آزمائشوں اور حالات سے نبرد آزما ہو سکیں۔ چونکہ وہ خود جسمانی طور پہ معذور ہیں اس لیے وہ دوسروں کے احساسات و مشکلات سمجھ سکتی ہیں جو وہ روزمرہ زندگی میں برداشت کرتے ہیں۔ بریکنگ بیرئیر ویمن کا مقصد معذور خواتین کو بااختیار بنانا ہے تاکہ وہ خود پر اور اپنی مختلف صلاحیتوں پر فخر محسوس کر سکیں۔ اس بارے میں شازیہ کا مزید کہنا ہے کہ ''اپنی تعلیم مکمل کرنے کے بعد میں نے اپنے لیے نوکری کی تلاش شروع کی کیونکہ میں اپنے لیے ایسا مستقبل بنانا چاہتی تھی جس میں مجھے کسی کی مدد کی ضرورت نہ رہے۔ میری معذوری کبھی میرے راستے کی رکاوٹ نہیں بنی۔ اگر میں اپنے حوصلے کے ذریعے اپنی معذوری اور معاشرے کی صعوبتوں کو شکست دے سکتی ہوں تو میں اپنی زندگی کے بھی بہت سے اہم اور مضبوط فیصلے لے سکتی ہوں جو میں نے لیے بھی ہیں۔ میری معذوری میرے لیے ہمیشہ ہمت و حوصلے کی حیثیت رکھتی ہے اور میں دوسرے لوگوں کی بھی حوصلہ افزائی کرنے کی کوشش کرتی ہوں، اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا کہ آپ کس طرح کے حالات سے گزر رہے ہیں، کبھی بھی امید کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑنا چاہیے کیونکہ امید ہی اصل طاقت اور روشنی ہے۔''

Watch Video
SONAL DHANANI (SINDH)

سونال دھنانی (سندھ)

سونال دھنانی پیشے کے اعتبار سے تخلیق کار، این ایل پی پریکٹیشنر اور پاکستان میں تعلیم، زہنی نشوونما سے متعلق اقدامات اور معاشرتی افعال کو فروغ دینے کی خواہاں سہولت کار ہیں۔ وہ سویڈش انسٹیٹیوٹ کے توسط سے اٹلانٹک کونسل 2016 کے پروگراموں 'Emerging Leaders of Pakistan' اور 2018 میں 'Young connectors of future' کا حصہ بھی رہی ہیں۔ حآلیہ طور پر وہ نوجوانوں اور کمیونٹی کے حوالے سے قائم کردہ فیملی ایجوکیشن اینڈ سروسز فاؤنڈیشن میں بحیثیت پروجیکٹ مینیجر کام کر رہی ہیں۔ انھوں نے فنکاروں اور مصنفوں کے امن اور ہم آہنگی کو فروغ دینے لے لیے بنائے گئے فن پاروں کی نمائش کے لیے ادبی سیمینار اور دیگر تقریبات منعقد کرانے کے لیے مختلف تنظیموں کے ساتھ کام کیا ہے۔ ان کے نزدیک آرٹ؛ مذہب، ذات پات، رنگ و نسل، صنف یا زبان سے قطع نظر لوگوں کو متحد کرنے کا بہترین زریعہ ہے۔ 2015 میں انھوں نے 'پرندے' کے نام سے ایک تنظیم شروع کی جو معاشرے میں تخلیقی اجارہ داری( آرٹ، موسیقی اور سینما تھراپی) مہیا کرنے اور فنون اور ثقافت کو مظبوط معاشرے کی تعمیر و ترقی کے لیے مؤثر طور پر استعمال کرنے کے لیے استعمال کرتے ہیں۔ اس پروگرام میں ڈپریشن، اضطراب اور اسی طرح کے دیگر نفسیاتی کیفیات کو کم کرنے کے لیے زہنی صحت جیسے معاملات کی فلاح و بہبود پر توجہ دی جاتی ہے۔ ان تنظیموں کے زریعے سونال عوامی سطح پر امن کے مرکزی عمل کے دھارے میں بھرپور حصہ لے رہی ہیں۔

Watch Video

۔ زین اشرف مغل (پنجاب)

زین پہلے پاکستانی ہیں جن کو 2018 میں یو کے کے شاہی خاندان کی جانب سے یوتھ ایوارڈ برائے ایکسیلینس ان ڈویلپمنٹ ورک دیا گیا۔ انھوں نے 650 سے زائد غربت کی لکیر سے نیچے رہنے والے لوگوں کے لیے چھوٹے کاروبار شروع کروائے اور 1800 بچوں کو واپس سکول بھیجا۔ برطانیہ کے ہیڈس آف گورنمنٹ کی میٹنگ اور شہزادہ ولیم، ڈیوک آف کیمبرج کے ساتھ گول میز کانفرنس میں پاکستان کی نمائندگی بھی کر چکے ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ 2015 میں او آئی سی میں بطور مقرر پاکستان کی نمائندگی کی۔ پاکستان کے پہلے (NPO) کراؤڈ فنڈنگ پلیٹ فارم اور سیڈ آؤٹ کا آغاز کیا۔ اس کے علاوہ www.eccountant.co کے بانی اور سی ای او ہونے کس ساتھ ساتھ سپر ایشیا گروپ، ورل پول پاکستان اور ہارڈیز پاکستان کے مینیجنگ ڈائریکٹر بھی ہیں۔

Watch Video
ZOE VICCAJI

زوئی وکاجی (سندھ)

ذوئی نے اپنے کیرئیر کا آغاز 17 سال کی عمر میں مقامی بینڈ Ganda Bandas میں شامل ہو کر کیا۔ کچھ سال بعد نیو یارک کے ہیلمٹن کالج میں تعلیم حاصل کرنے کے لیے امریکہ منتقل ہو گئیں۔ انھوں نے سٹیج میوزک Mamma Mia اور Chicago میں بھی کام کیا۔ 2009 میں پاکستان واپس آنے کے بعد انھوں نے اپنا ‘Thinking About You’ جاری کیا۔ 2010 میں کوک سٹوڈیو میں شمولیت اختیار کی اور سٹرنگز اور بلال خان کے اشتراک سے 'میرا بچھڑا یار' اور 'انجانے' ریلیز کیا۔ 'میرا بچھڑا یار' کو گیارہویں لکس سٹائل ایوارڈز میں Song of the year کے لیے نامزد کیا گیا۔ ذوئی نے 2014 میں یونیورسل میوزک انڈیا کے زیر سایہ اپنا پہلا البم 'دریچے' جاری کیا۔ 2015 میں اس البم نے ہندوستان میں انڈین ریکارڈنگ آرٹس (ٰIRA) میں بہترین مخلوط البم اور پاکستان میں بہترین البم کے لیے لکس سٹائل ایوارڈ جیتا۔ اس البم کے گانے 'پھر ملی تنہائی' کو خوب پزیرائی ملی۔

Watch Video
Paksitan Citizen Portal

تجاویز و شکایات

کامیاب جوان پروگرام سے متعلق اپنی تجاویز و شکایات دینے کے لیے • گوگل پلے سے ایپلیکیشن ڈاؤن لوڈ کریں سے سٹیزن پورٹل ایپ ڈاؤن لوڈ کریں اور یوتھ سے منسلک لنک پر جائیں۔